متفرقات نقطۂ نظر

قصّہ ایک انٹرویو کا (یادداشتیں)

(تمنا تو بہت مختصر تھی مگر تمہید کچھ زیادہ ہی طولانی ہو گئی) بھٹو حکومت کا آخری سال تھا۔ ملاں ملٹری سازباز شروع ہو چکی تھی مگر ابھی اس نے سر پوری طرح زمین سے باہر نہیں نکالا تھا۔ ایکٹ پر بنی پیپلز اوپن یونیورسٹی ابھی گھٹنوں کے بل رینگ رہی تھی۔  ڈاکٹر ولی محمد […]

طنز و مزاح نقطۂ نظر

محبِ محترم المعروف گَشت والی سرکار – ایک نامکمل خاکہ

چہرہ بھرا بھرا، نقش متناسب، ہنستی بولتی سرمہ بھری آنکھوں میں شرارت کی چمک، سفید گھنی داڑھی میں خال خال لہریے دار سیاہی، فربہ جسم مائل بہ مزید فربہی، چال میں وقار، ڈھال میں عہدے کا خمار، پیٹ میں ڈکار۔ زرد چارخانے کا رومال،  کندھے پر ڈال لیں تو یوں لگے ابھی ابھی تہتر  کے […]

نقطۂ نظر

ایک مفروضے پہ قائم ہے ابھی تک دنیا

مجھے تو کیا ابھی بنانے والوں کو خود بھی نہیں معلوم کہ پچاس لاکھ گھر بنائے گا کون، بنیں گے کہاں، کیسے اور کس کے لیے۔ الہ دین کے چراغ کا زمانہ تو لد چکا کہ سوال ہو “کیا حکم ہے میرے آقا؟” اور پھر فوری طور پر تعمیل بھی ہو جائے“جو حکم میرے آقا”۔ […]