سیر و سیاحت متفرقات مقامات

وکٹوریہ البرٹ میوزیم اور نیچرل ہسٹری میوزیم

منزل کی جستجو ہے تو جاری رہے سفر — تیسرا حصہ میوزیم یاترا جانا تو تھا آج ہمیں گرینچ، لیکن اللہ بھلا کرے بارش کا۔ لندن میں رات سے ہی رم جھم جاری تھی۔ ٹکٹیں خریدی جا چکی تھیں۔ ہم گرینچ کے ارادے سے گھر سے نکلے مگر بارش نے زور پکڑ لیا۔ پروگرام میں […]

طنز و مزاح

پاکستانی سیاست اور بریانی

پاکستانی سیاست کا حال بالکل بریانی جیسا ہے جس کی کوئی کل سیدھی نہیں ۔ یہ خیال ہمارے مرزا کا ہے۔ ہوا یوں کہ کل مرزا نے ہمیں کھانے پر بلایا۔ کہنے لگے ۔ میاں!آج تمھاری بھابھی نے حیدر آبادی بریانی دم پر لگائی ہے پیشتر اس کے کہ اس کا دم نہ نکل جائے […]

سیر و سیاحت مقامات

گرینچ۔۔۔ جہاں سے وقت کا آغاز ہوتا ہے

منزل کی جستجو ہے تو جاری رہے سفر — دوسرا حصہ گرینچ دیکھ لے اس چمن دہر کو دل بھر کے نظیر پھر ترا کاہے کو اس باغ میں آنا ہوگا پچھلے سال لندن میں شاہدہ باجی کے گھر ان کی مہمان نوازی کے مزے لوٹ رہی تھی۔ وہ ہر وہ چیز میرے لیے کر […]

سیر و سیاحت

بائی بری – شہد کے پتھروں کا گاؤں

منزل کی جستجو ہے تو جاری رہے سفر — پہلا حصہ بائی بری کہتے ہیں ملکِ خدا تنگ نیست پائے گدا لنگ نیست۔ بس مسافرت کا ولولہ اور سیاحت کا مشغلہ درکار ہے، سو حسن کے شیدائی گھر سے نکل پڑتے ہیں۔ ماضی میں سیاحت کے لیے قدم گھر سے نکلتے تھے تو اب انگلی […]

طنز و مزاح متفرقات

پرائے پھٹے میں ٹانگ اڑانا

ہماری قوم کی عادت ہے کہ ہم دوسروں کے پھڈے میں ٹانگ اڑاتے ہیں اور اپنی ٹانگ تڑوا بیٹھتے ہیں۔لاکھ سمجھایا کہ بھئی اپنے کام سے کام رکھو اور دوسروں کو اپنا کام کرنے دو۔ مگر وہ جو اپنے غالب  کہہ گئے ہیں: ؎            وہ اپنی خو نہ چھوڑیں گے ہم اپنی وضع کیوں بدلیں […]

طنز و مزاح

مرزا اور مرزا غالب

ہمارے مرزا بھی عجیب ہی شے  ہیں۔ آج کو کل  سے ملانے لگے۔ فرما تے ہیں کہ مرزا غالب برسوں پہلے وہ کہہ گئے جو آ ج ستاروں کا احوال اور ستاروں کا حال اور ستاروں کی چال بتانے والے نجومی کاغذ پر آڑی  ترچھی لکیریں کھینچ کر ٹی وی کی اسکرین پر نمو دار […]

سماج سیاست نقطۂ نظر

چابی کا کھلونا

آج شیخ رشید کے ایک بیان نے ہمیں اپنی تحریر کا عنوان دیا۔ موصوف نے فر مایا کہ بلاول چابی کا کھلونا ہے۔ شیخ رشید کی یہ بات ہمارے دل کو چھو گئی۔ چلیں انھیں بھی کوئی دوسری بات سوجھی ورنہ موصوف کی شکل پر تو صرف عمران خان  ہی بجا کر تے ہیں۔ مرزا […]

متفرقات

بی جمالو

آج مرزا کو بات بے بات ہنستا دیکھ کر ہم دنگ رہ گئے۔ ورنہ مرزا اور اپنے دانت دکھائیں۔ بقول مرزا دانت ہیں، کوئی چمپا کلی نہیں۔ ہم کو اچنبھے میں دیکھ کرفرمایا۔ میاں آج تمھاری ہانڈی چوراہے  پر پھوٹ گئی۔ بی جمالو نے گھر گھر بات پھیلا دی ہے۔ بھئی مرزا! یہ کس بی […]

مقامات نقطۂ نظر

میرا حیدرآباد – حصہ سوم

حیدرآباد کی گنگا جمنی تہذیب کا ذکر اس کی صنعتی نمائش کے بغیر ادھورا ہے۔ میں نے اس نمائش کو کب دیکھا تھا مجھے یاد نہیں۔ شاید میں اماں کی گود میں تھی یا پھر شاید میں نے پاؤں پاؤں چلنا سیکھا تھا۔ ہوش آیا تو دیکھا کہ دنیا خود ایک تماشا گاہ ہے۔ خیر […]

طنز و مزاح نقطۂ نظر

ہم تو ایسے ہیں بھیا !

ہاں! تو اب ہم کیا کریں۔ ہماری کوئی کل جو سیدھی نہیں۔ یہ صرف ہمارا کہنا نہیں۔ ہمارے بڑوں کا کہنا ہے۔ سارا آوے کا آوا ہی بگڑا ہوا ہے۔ نانی کا کہنا تھا کہ یہ چاند گرہن کا فتور ہے۔ اماں نے کروٹ جو بدل لی تھی۔ اب آپ دیکھیں۔ بکرا عید کو ہم […]