نقطۂ نظر

ہو جس سے اختلاف اسے مار ڈالیے!

سرپٹ دوڑتے ہوئے اُس نے ایک دفعہ پھر سے مُڑ کر دیکھا جیسے پوچھ رہا ہو میرا قصور کیا ہے؟ اس کی ملتجی نظریں بار بار سوال کر رہی تھیں، ایک دفعہ میرا قصور تو بتا دو؟ اس کا سانس پھولتا جا رہا تھا، ٹانگیں پسینے سے شرابور اور بھاری ہوتی جارہی تھیں قریب تھا […]

زبان و ادب کتب خانہ نقطۂ نظر

ٹرین ٹو پاکستان – ایک ریویو

ٹرین ٹو پاکستان  سالِ اشاعت: 1956ء زبان:  انگریزی صفحات کی تعداد:   181 اس کتاب کا شمار برصغیر کی تقسیم کے حوالے سے لکھی گئی بہترین کتابوں میں  ہوتا ہے۔ کتاب کی کہانی تقسیم کے وقت کی کہانیوں کا احاطہ کرتی ہے،اور ان پر روشنی  ڈالتی ہے۔ سردار خوشونت سنگھ جی کا یہ ناول 1956ء میں […]

سماج لائف اسٹائل نقطۂ نظر

وقت کب گزرتا ہے!

کل شام سے ہی مینہ پڑنے لگا اور رات بھر بادل خوب جم کر برسے تھے۔  یہ مون سون کی پہلی بارش تھی اور برسی بھی خوب تھی کہ دھرتی ماں نے پچھلے دو ماہ جو تپش سینے پر سینکی تھی اس کی  ساری پیاس مٹا دی۔ صبح انتہائی خوشگوار تھی۔ درخت رات بھر نہا […]

زبان و ادب کتب خانہ نقطۂ نظر

پیار کا پہلا شہر از مستنصر حسین تارڑ (میرے لیے چچاجی)

چچا جی "مستنصر حسین تارڑ” صاحب سے اپنی محبت تو پرانی ہے لیکن ان کی محبت کا قصہ پڑھنے میں کافی تاخیر ہو گئی۔ ویسے چچا جی کو محبت تو ہر سفرنامے/ کہانی/ قصے/ کتاب  میں ہو جاتی ہے اور ان کی  ہر کتاب پڑھ کر ان سے ہماری محبت میں بھی  ایک دفعہ پھر سے […]

حالاتِ حاضرہ نقطۂ نظر

سیاسی رومان سے ہیجان تک!!!!

سیاسی میلان رکھنا عبث ہے اور نہ ہی سیاست پر گفتگو کرنا۔ لیکن سیاسی بساط کی بنا پر تعلق داریاں خراب کرنا انتہائی فضول امر ہے۔ سیاست کی بساط پر مہرے بدلتے رہتے ہیں، اونچ نیچ بھی ہوتی رہتی ہے لیکن ان  سیاسی کھلاڑیوں کی چالوں پر جذباتی ہو کر  باہمی محبتیں،  دوستیاں اور تعلقات کھونا انتہائی قبیح فعل ہے۔

حالاتِ حاضرہ سماج

سانوں کیہ فرق پیندا اے

سارے دن کی بھاگ دوڑ کے بعد کمر چارپائی سے لگتے ہی میر عالم عاشق کی ہائے نکل گئی۔ یہ ہائے ساری دن کی کمر توڑ تھکاوٹ کے بعد میسر آنے والے اس ایک لمحے اور اس سے ملنے والی راحت کا نچوڑ تھی۔ اپنے بازؤوں کا تکیہ بنا کر وہ راحت و سکون کے […]

سماج نقطۂ نظر

دولے شاہ کے چوہے

سبز رنگ کا  کھلا سا چولا پہنے،نسبتاً (کبھی غیرمعمولی) چھوٹے سر کے، ماؤف دماغ  کے حامل، ناک سے مسلسل بہتے رینٹھ، برہنہ پا، ہاتھ میں کشتی نما کشکول لیے یہ افراد پنجاب کے شہری و دیہی علاقوں میں اکثر دکھائی دیتے ہیں۔ اس مخصوص حلیے  کے حامل افراد "دولے شاہ کے چوہے” کے نام سے پہچانے اور […]