سماج نقطۂ نظر

پاکستان کی محبت سے سرشار چند ملی نغمے

محبت کا جذبہ ہی وہ قوت ہے جو فرد سے بظاہر ناممکن کام بھی ممکن کروا دیتا ہے، اسی طرح پاکستان کے قیام کا حیران کن اور بظاہر ناممکن کارنامہ بھی مسلمانان ہند  بالخصوص قائداعظم اور ان کے رفقا کی محبت اور انتھک جدوجہد سے ہی انجام پایا۔ اور یہ وطنِ جنت نشان کی محبت ہی ہے جو ہمیں نہ صرف ایک لڑی میں پروئے رکھتی ہے، ہمارے دلوں کو گرماتی ہے جو ہم دشمن کے آگے سیسہ پلائی دیوار بن جاتے ہیں تو دوستوں کے لیے ٹھنڈی میٹھی چھاؤں۔ وطن کی محبت نہ صرف ہمارے دل کو مسرور رکھتی ہے بلکہ یہ ہمارے لبوں سے نغموں کی صورت رواں بھی ہوتی ہے۔ پاکستان کے ہماری زندگیوں میں شامل ہونے، پاکستان کے قیام اور تنظیم پاکستان سے لے کر آج تک ہمارے پاکستانی بھائی مختلف انداز میں ملی نغموں کی صورت وطن سے محبت کا اظہار کرتے رہے ہیں۔ ان میں سے کچھ نغمے ایسے بھی ہیں جو اب تاریخ کی حیثیت اختیار کرگئے ہیں۔ ان نغموں کو سنتے ہی دل پاکستان کی محبت سے سرشار ہی نہیں ہوتے بلکہ آنکھیں بھی جذبہ محبت سے مغلوب ہوکر نم ہوجاتی ہیں۔ درج ذیل سطور میں ہم چند ایسے ہی نغمے اپنے قارئین کی خدمت میں پیش کر رہے ہیں۔

چاند میری زمین پھول میرا وطن

چاند میری زمین پھول میرا وطن
میرے کھیتوں کی مٹی میں لعل یمن
میرے ملاح لہروں کے پالے ہوئے
میرے دہقاں پسینوں کے ڈھالے ہوئے
میرے مزدور اس دور کے کوہ کن
چاند میری زمیں پھول میرا وطن

میرے فوجی جواں جراتوں کے نشاں
میرے اہل قلم عظمتوں کی زباں
میرے محنت کشوں کے سنہرے بدن
چاند میری زمیں پھول میرا وطن

میری سرحد پہ پہرہ ہے ایمان کا
میرے شہروں پہ سایہ ہے قرآن کا
میرا ایک ایک سپاہی ہے خیبر شکن
چاند میری زمیں پھول میرا وطن

میرے دہقاں یونہی ہل چلاتے رہیں
میری مٹی کو سونا بناتے رہیں
گیت گاتے رہیں میرے شعلہ بدن
چاند میری زمیں پھول میرا وطن

__ * __ * __

نئے دِنوں کی مُسافتوں کو اُجالنا ہے​

نئے دِنوں کی مُسافتوں کو اُجالنا ہے​

وفا سے آسُودہ ساعتوں کو سنبھالنا ہے​

سنبھالنا ہے​

اُمّیدِ صُبحِ جمال رکھنا،خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

یہ دُھوپ اِس کی ،یہ چھاؤں اِس کی ہماری دولت​

ہماری دولت​

یہ خاکِ پاک اِس کی اپنی عِزّت ہے اپنی عظمت​

ہے اپنی عظمت​

نئے دِنوں کی مُسافتوں کو اُجالنا ہے​

وفا سے آسُودہ ساعتوں کو سنبھالنا ہے​

سنبھالنا ہے​

سنبھالنا ہے​

اُمّیدِ صُبحِ جمال رکھنا،خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

وقار اِس کا کبھی نہ کم ہو​

یہ سبز پرچم تمام عالم میں مُحترم ہو​

نئے دِنوں کی مُسافتوں کو اُجالنا ہے​

اُجالنا ہے​

وفا سے آسُودہ ساعتوں کو سنبھالنا ہے​

سنبھالنا ہے​

اُمّیدِ صُبحِ جمال رکھنا،خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

وطن سے ہم ہیں، وطن ہے ہم سے​

خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

چلو مِلا کر قدم قدم سے​

خیال رکھنا​

خیال رکھنا​

__ * __ * __

سوہنی دھرتی

سوہنی دھرتی اللہ رکھے
قدم قدم آباد
قدم قدم آباد تجھے
سوہنی دھرتی سوہنی دھرتی
اللہ رکھے
تیرا ہر اک ذرہ ہم کو اپنی جان سے پیارا
تیرے دم سے شان ہماری تجھ سے نام ہمارا
جب تک ہے یہ دنیا باقی ہم دیکھیں آزاد تجھے
سوہنی دھرتی سوہنی دھرتی
اللہ رکھے
قدم قدم آباد
قدم قدم آباد تجھے
قدم قدم آباد تجھے
دھڑکن دھڑکن پیار ہے تیرا
قدم قدم پر گیت رے
دھڑکن دھڑکن پیار ہے تیرا
قدم قدم پر گیت رے
بستی بستی تیرا چرچا نگر نگر اے میت رے
جب تک ہے یہ دنیا باقی ہم دیکھیں آزاد تجھے
سوہنی دھرتی سوہنی دھرتی
اللہ رکھے
قدم قدم آباد
قدم قدم آباد تجھے
قدم قدم آباد تجھے
سوہنی دھرتی اللہ رکھے
تیری پیاری سج دھج کی ہم اتنی شان بڑھائیں
آنے والی نسلیں تیری عظمت کے گن گائیں
جب تک ہے یہ دنیا باقی ہم دیکھیں آزاد تجھے
سوہنی دھرتی سوہنی دھرتی
اللہ رکھے
قدم قدم آباد
قدم قدم آباد تجھے

__ * __ * __

میں بھی پاکستان ہوں تو بھی پاکستان ہے

میں بھی پاکستان ہوں
تو بھی پاکستان ہے
تُو تو میری جان ہے
تُو تو میری آن ہے
تُو میرا ایمان ہے
کہتی ہے یہ راہِ عمل
آؤ ہم سب ساتھ چلیں
مشکل ہو یا آسانی
ہاتھ میں ڈالیں ہاتھ چلیں
سورج ہے سرحد کی زمیں
چاند بلوچستان ہے
میں بھی پاکستان ہوں
تو بھی پاکستان ہے
گلشن ہو یا پربت ہو
ہم سے کوئی دور نہیں
دل کس کی تعریف کرے
ہر گوشہ ہے آپ حسین
دھڑکن ہے پنجاب اگر
دل اپنا مہران ہے
میں بھی پاکستان ہوں
تو بھی پاکستان ہے

__ * __ * __

جیوے جیوے پاکستان
جیوے پاکستان
جیوے جیوے پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

من پنچھی جب پنکھ ہلائے
کیا کیا سر بکھرائے
سننے والے ان میں ایک ہی دھن لہرائے
پاکستان پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

جیوے جیوے پاکستان
جیوے پاکستان
جیوے جیوے پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

بکھرے ہوئے کو بچھڑے ہوئے کو
اک مرکز پہ لایا
اتنے ستاروں کے جھرمٹ میں
سورج بن کر آیا

پاکستان پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

جیوے جیوے پاکستان
جیوے پاکستان
جیوے جیوے پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

جھیل گئے دکھ جھیلنے والے
اب ہے کام ہمارا
ایک رکھیں گے
ایک رہے گا
ایک ہی نام ہمارا
ایک ہی نام ہمارا

پاکستان پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

جیوے جیوے پاکستان
جیوے پاکستان
جیوے جیوے پاکستان
پاکستان پاکستان
جیوے پاکستان

__ * __ * __

میرا انعام پاکستان

میرا انعام پاکستان

جب ہم نے خدا کا نام لیا

اس نے ہمیں انعام دیا

میرا انعام پاکستان میرا پیغام پاکستان

محبت امن ہے اور اس کا ہے پیغام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

میرا پیغام پاکستان

خدا کی خاص رحمت ہے

بزرگوں کی بشارت ہے

کئی نسلوں کی قربانی

کئی نسلوں کی محنت ہے

اثاثہ ہے جیالوں کا

شہیدوں کی امانت ہے

تعاون ہی تعاون ہے

محبت ہی محبت ہے

جبھی تاریخ نے رکھا ہے

اس کا نام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

میرا انعام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

میرا پیغام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

محبت امن ہے اور اس کا ہے پیغام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

میرا انعام پاکستان

پاکستان پاکستان پاکستان پاکستان

میرا پیغام پاکستان

اندھیروں کو مٹائے گا

اجالا بن کے چائے گا

یہ خطہ انقلابی ہے

نئی دنیا بنائے گا

اگر اللہ نے چاہا

زمانہ وہ بھی آئے گا

جہاں تک وقت جائے گا

ہمیں آگے ہی پائے گا

ندا قائد کی ہے

اقبال کا الہام پاکستان

پاکستان پاکستان

__ * __ * __

یہ وطن تمہارا ہے، تم ہو پاسباں اس کے

یہ وطن تمہارا ہے، تم ہو پاسباں اس کے

یہ چمن تمہارا ہے، تم ہو نغمہ خواں اس کے

اس چمن کے پھولوں پر رنگ و آب تم سے ہے

اس زمیں کا ہر ذرہ آفتاب تم سے ہے

یہ فضا تمہاری ہے، بحر و بر تمہارے ہیں

کہکشاں کے یہ جالے، رہ گزر تمہارے ہیں

اس زمیں کی مٹی میں خون ہے شہیدوں کا

ارضِ پاک مرکز ہے قوم کی امیدوں کا

نظم و ضبط کو اپنا میرِ کارواں جانو

وقت کے اندھیروں میں اپنا آپ پہچانو

یہ زمیں مقدس ہے ماں کے پیار کی صورت

اس چمن میں تم سب ہو برگ و بار کی صورت

دیکھنا گنوانا مت، دولتِ یقیں لوگو

یہ وطن امانت ہے اور تم امیں لوگو

میرِ کارواں ہم تھے، روحِ کارواں تم ہو

ہم تو صرف عنواں تھے، اصل داستاں تم ہو

نفرتوں کے دروازے خود پہ بند ہی رکھنا

اس وطن کے پرچم کو سربلند ہی رکھنا

یہ وطن تمہارا ہے، تم ہو پاسباں اس کے

یہ چمن تمہارا ہے، تم ہو نغمہ خواں اس کے ​

__ * __ * __

اس پرچم کے سائے تلے، ہم ایک ہیں

اس پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

سانجھی اپنی خوشیاں اور غم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

ایک چمن کے پھول ہیں سارے، ایک گگن کے تارے

ایک گگن کے تارے

ایک سمندر میں گرتے ہیں سب دریاؤں کے دھارے

سب دریاؤں کے دھارے

جدا جدا ہیں لہریں، سرگم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

سانجھی اپنی خوشیاں اور غم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

ایک ہی کشتی کے ہیں مسافر اک منزل کے راہی

اک منزل کے راہی

اپنی آن پہ مٹنے والے ہم جانباز سپاہی

ہم جانباز سپاہی

بند مٹھی کی صورت قوم ہم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

سانجھی اپنی خوشیاں اور غم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

اس پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

پاک وطن کی عزت ہم کو اپنی جان سے پیاری

اپنی جان سے پیاری

اپنی شان ہے اس کے دم سے، یہ ہے آن ہماری

یہ ہے آن ہماری

اپنے وطن میں پھول اور شبنم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

سانجھی اپنی خوشیاں اور غم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

اس پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں، ہم ایک ہیں

__* __ * __

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

ہر دل کی افق پر ہے چاند ایک ستارہ ایک

ہے کلمہ بھی واحد، پرچم بھی ہمارا ہے

ہم یک دل، ہم یک جان

ہم یک دل، یک جان

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

اخلاص،یقین، تنظیم، ہے ملت کا منشور

ہر چارہ  و منزل پر ،ملت کے دل کا نور

اللہ نبی قرآن

اللہ نبی قرآن

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

رحمت کی طرح سرپر، بہنوں کی ردائیں ہیں

ہمت کے لیے ہمراہ، ماؤں کی دعائیں ہیں

ہم پر رب کا احسان

ہم پر رب کا احسان

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

اسلام کے لشکر میں، ہیں قاسم سے فرزند

اس ملک و ملت میں، بچے بھی کڑی کمند

بوڑھے بھی چڑھی کمان

بوڑھے بھی چڑھی کمان

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

ان ملوں، مشینوں کے سب پہیے گھومیں گے

مزدور بھی ہوں گے شاد، دہقان بھی جھومیں گے

سونا دیں گے کھلیاں

سونا دیں گے کھلیاں

ہم زندہ قوم ہیں، پائندہ قوم ہیں

ہم سب کی ہے پہچان

ہم سب کا پاکستان پاکستان پاکستان

ہم سب کا پاکستان

 

اقرا اکرم
رنگ، تتلی، خوشبو اور خوب صورت پہناووں کی دلدادہ اقرا انٹر کی طالبہ ہیں۔ ابھی ٹین ایج میں ہیں لیکن معاشرے کو بہت سنجیدہ نگاہ سے دیکھتی ہیں۔ سماجی مسائل پر قلم اٹھانے میں دل چسپی رکھتی ہیں اور مطمئن پاکستانی معاشرے کی خواہاں ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کیجیے